83

میجر کامران ناصر کی لیفٹیننٹ کرنل کے عہدے پر ترقی

گلگت بلتستان کے فرزند اور پاک فوج کے میجر کامران ناصر کو ترقی دے کر لیفٹیننٹ کرنل بنادیاگیا۔ترقی پانے والے لیفٹیننٹ کرنل کامران ناصر کا تعلق گلگت شہر کے علاقے کشروٹ کے سودہ محلے سے ہے اور وہ حاجی محمد سلطان مرحوم کے پوتے، ممتاز قانون دان وکیل عبدالرازق کے نواسے اور ہاوس بلڈنگ فنانس کارپوریشن کے ریٹائرڈ سینئر مینیجر شاہ دین کے بھتیجے ہیں۔لیفٹیننٹ کرنل کامران ناصر کے والد ناصرالدین(ڈائریکٹر زرعی ترقیاتی بینک) اپنی اہلیہ اور چھوٹی بیٹی کے علاوہ اپنے دیرینہ ساتھی آصف علی(مینیجرزرعی ترقیاتی بینک) ان کی اہلیہ اور دو چھوٹے بیٹوں سمیت 25 اگست 1989 کو گلگت سے اسلام آباد جاتے ہوئے لاپتہ ہونے والے فوکر طیارے میں موجود تھے۔اس لاپتہ مسافر طیارے کا تاحال کوئی سراغ نہ مل سکا۔کامران ناصر نے کپتان اور بعد ازاں میجر کی حیثیت سے گلگت بلتستان سمیت ملک کے مختلف علاقوں اپنے فرائض انجام دیئے اور اب لیفٹیننٹ کرنل کے عہدے پر ترقیاب ہونے پر ان کے دوست احباب اور عزیز و اقارب و رشتہ داروں نے دلی مبارکباد پیش کرتے ہوئے ان کی مذید ترقی اور سلامتی کے لیے دعا کی ہے اور اس امید کا اظہار کیا ہے کہ وہ پاک فوج میں اپنی بہترین صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے ملک وملت کی خدمت کے لیے کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کریں گے۔