123

وزیراعلیٰ نے ضلعی ہیڈکوارٹرزہسپتالوں کے لئے جامع پالیسی طلب کرلی

گلگت(پ ر)وزیراعلیٰ گلگت  بلتستان خالد خورشید نے ضلعی ہیڈکوارٹرزہسپتالوں کے لئے جامع پالیسی طلب کرلی۔انہوں نے کہا ہے کہ تمام ضلعی ہیڈکوارٹرز کے ہسپتالوں کو مکمل طورپر فعال بنایا جائے گا جس کیلئے ڈاکٹروں کی مشاورت سے روٹیشن پالیسی تیار کی جائے اور پالیسی پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔ صوبائی حکومت تمام ضلعی ہیڈکوارٹر کے ہسپتالوں کو فعال بنانے کیلئے درکار وسائل فراہم کرے گی۔ تمام ضلعی کوارٹر ہسپتالوں کو فعال بنانے کیلئے جامعہ پالیسی بنائی جائے اور ہنگامی بنیادوں پر ضلعی ہیڈکوارٹر کے ہسپتالوں کو فعال بنانے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ تمام ہسپتالوں کو بلاتعطل بجلی کی فراہمی یقینی بنانے کے احکامات دیئے گئے تھے۔ گلگت  بلتستان میں بہتر طبی سہولیات کی فراہم میں جنرل نرسنگ کا شعبہ انتہائی اہم ہے جس کو مدنظرر کھتے ہوئے ترجیحی بنیادوں پر نرسز کی کمی دور کی جاے گی جس کیلئے درکار اسامیاں تخلیق کی جارہی ہیں۔ گلگت  بلتستان میں جنرل نرسزکی مطلوبہ تعداد میسر نہ ہونے کی صورت میں دیگر صوبوں سے بھی جنرل نرسز کی خدمات لی جائیں گی۔ ہسپتالوں میں موجود باصلاحیت پیرا میڈیکل سٹاف کی ملک کے بہترین اداروں سے ٹریننگ کرائی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ گلگت  بلتستان خالد خورشید نے ہیلتھ ریفارمز کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ گلگت  بلتستان خالد خورشید نے کہا کہ صوبے کے تمام ضلعی ہیڈکوارٹرز کے ہسپتالوں میں آپریشن، بلڈ بینک، ڈائیگونسٹک(تشخیص)، ای سی جی سمیت تمام ضروری سہولیات کی دستیابی کو یقینی بنایا جائے۔ ضلعی ہیڈکوارٹرز کے ہسپتالوں کو فعال کرنے سے گلگت اور سکردو کے ہسپتالوں میں مریضوں کا بوجھ کم ہوگا۔ صوبائی حکومت مستقبل کو مدنظر رکھتے ہوئے بون میرو ، کڈنی ٹرانسپلانٹ ، امراض قلب ، کینسر کے علاج سمیت دیگر طبی سہولیات کی صوبے میں فراہمی کے لئے منصوبہ بندی کرے گی۔ صوبے میں پہلی مرتبہ صوبائی سوشل رجسٹری کے قیام پر غور کیا جارہاہے۔ عوام کی فلاح و بہبود کیلئے خصوصی اصلاحات متعارف کرائے جائی جائیں گی۔ تمام اضلاع کی آبادی کا ڈیٹا بیس تیار کیا جائے گا اور محکموں کو اس ڈیٹا بیس سے منسلک کیا جائے گا تاکہ گورننس کے نظام کو بہتر بنایا جاسکے۔ دور دراز علاقوں میں صحت کی سہولیات کی فراہمی کیلئے ٹیلی میڈیسن کا منصوبہ شروع کیا جارہاہے۔ ہسپتالوں میں معیاری ادویات کی دستیابی کو یقینی بنانے اور بے ضابطگیوں کے خاتمے کیلئے پیپرا قوانین کے مطابق دواساز کمپنیوں سے ہی ادویات خریدنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ 6 جون تک تمام ضلعی ہیڈکوارٹرز کے ہسپتالوں کومکمل طورپر فعال بنانے کیلئے ہیلتھ ریفارمز کمیٹی کا اجلاس باقاعدہ طور پرمنعقد کیا جائے ۔ وزیراعلیٰ گلگت  بلتستان خالد خورشید نے بلین ٹری سونامی کے تحت گلگت  بلتستان میں 21تا23فروری تک صوبے بھر میں وسیع پیمانے پر شجرکاری مہم کا آغاز کرنے کے حوالے سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تمام سٹیک ہولڈرز اور کمیونٹی کے اشراک سے تحصیل اور گائوں کی سطح پر 21تا23 فروری تک شجرکاری مہم کو کامیاب بنانے کیلئے اقدامات اٹھائیں۔ مختلف علاقوں میں بلاک پلانٹیشن پر خصوصی توجہ دی جائے اور اس کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے۔ سوشل فاریسٹری پر بھی توجہ دی جائے۔ کمیونٹی کی شراکت کے بغیر شجرکاری مہم کامقصد حاصل کرنا ممکن نہیں لہٰذا یوتھ اور مقامی کمیونٹی کی اس شجرکاری مہم میں مکمل شراکت کو یقینی بنایا جائے۔ 21تا23فروری شجرکاری مہم کو ایک تہوار کے طور پر منایا جائے گا۔