52

وفاق سے تیس ارب کے بڑے منصوبے منظور کرائیں گے، وزیر اطلاعات

صوبائی وزیراطلاعات فتح اللہ خان نے کہا ہے کہ سیاحت،صحت،توانائی اوردیگر شعبوں میں25سے30ارب کے منصوبے وفاق سے منظورکرائیںگے۔گلگت تاشندوشاہراہ کی مرمت اور تعمیر نو کی ذمہ داری نیشنل ہائی وے اتھارٹی کو دینے  کے حوالے سے منعقدہ تریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراطلاعات نے کہا کہ ہماری حکومت ماضی کی حکومتوں کی نسبت معیاری سروس ڈیلیوری اورمفادعامہ کے منصوبوں کوبہتراندازمیں بروقت مکمل کرے گی۔انہوںنے کہا کہ غذرشندورروڈ کے علاوہ شغرئی روڈاورگئی داس روڈ کوپی ایس ڈی میں شامل کراکرآل ویدربنائیں۔سڑکوں کی بہتری کے بعدسیاحت کے شعبے میں انقلاب آئے گا اورخطے کی معیشت مستحکم ہوگی۔انہوںنے کہا کہ خطے کی ترقی کے لئے کی جانے والی کوششیں جلدرنگ لائیںگی۔حالیہ اسلام آباد دورے کے موقع پرہونے والی اہم ملاقاتیں اسی سلسلے کی کڑی ہیں۔انہوں نے کہا کہ این ایچ اے ایک مستند ادارہ ہے اورپاکستان بھر میں روڈانفراسٹرکچرکی بروقت اورمعیاری اندازمیں تکمیل کے لئے این ایچ اے کی خدمات ناقابل فراموش ہیں۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی سپیکر نذیر احمد ایڈوکیٹ نے کہا کہ گلگت اور غذر کے درمیان معیاری شاہراہ کی تعمیر سے سیاحت کو مزید فروغ ملے گا ،  وزیر اعظم پاکستان گلگت  بلتستان کی ترقی کو خصوصی اہمیت دیتے ہیںاور اس علاقے کی تعمیر و ترقی کے لئے سنجیدہ ہیں۔ تقریب کے شرکا ء کو جنرل منیجر این ایچ اے محبوب ولی  نے این ایچ اے کے حوالے سے بریفنگ دی انہوں نے کہا کہ غذر شندور روڑ کا جلد ہی ٹینذر کراکے کام کا باقاعدہ آغاز کیا جائے گا، روڈ کی بہتری اور مرمت کے لئے دس کروڈ کی لاگت سے کام شروع کیا جا رہا ہے۔ محبوب ولی نے کہا کہ داسو سے رائیکوٹ تک روڈ کو بھی جلد ہی مرمت کر کے بہتر بنایا جائیگا تاکہ عوام کو سفر میں آسانیاں پیدا ہو اور فاصلہ کم وقت میں طے ہو۔ تقریب سے ممبر اسمبلی نواز خان ناجی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم این ایچ اے سے امید رکھتے ہیں کہ وقت مقررہ میں معیار کے مطابق یہ منصوبہ مکمل کرے گی جو کہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔