70

پیپلزپارٹی نے اپنے ادوار میں 2نیشنل پارکس بنائے، ترجمان وزیراعلیٰ

گلگت(پ ر) ترجمان وزیر اعلی گلگت بلتستان  امتیاز علی تاج نے اپوزیشن لیڈر گلگت بلتستان  کے نیشنل پارکس کے قیام کے حوالے سے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ  اپوزیشن لیڈر کا  نیشنل پارکس کے قیام کے  حوالے سے بیان بے بنیاد اور بد نیتی پہ مبنی ہے ۔ اپوزیشن لیڈر کو اچھی طرح معلوم  ہے کہ گلگت بلتستان کا پہلا نیشنل پارک 'خنجراب نیشنل پارک' 1975 میں اپوزیشن لیڈر کے  ہی سیاسی امام ذولفقار علی بٹھو نے بنایا تھا۔ اپوزیشن لیڈر بتائے کیا زولفقار علی بٹھو نے خنجراب نیشنل پارک کا قیام کرکے گلگت بلتستان پہ حملہ کیا تھا؟ اسی طرح ضلع غذر میں واقع قرمبر نیشنل پارک کی منظوری 2011 میں ہوئی تھی جب وفاق میں اپوزیشن لیڈر کے موجودہ سیاسی پیر  آصف علی زرداری  کی حکومت تھی۔ اپوزیشن لیڈر بتائیں گلگت بلتستان کی سیاحت پہ دوسرا حملہ کیا آصف علی زرداری(Mr.10%)  نے کیا تھا؟اگر اپوزیشن لیڈر کی کرپٹ و نااہل  پارٹی  نیشنل پارکس بنائے تو ٹھیک مگر پی ٹی آئی کی حکومت بنائے تو غلط، کیوں؟انہوں نے کہا کہ  اپوزیشن لیڈر جان بوجھ کر عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں حالانکہ ان کو  بخوبی علم ہے کہ نیشنل پارکس بنانے کا مقصد صرف جنگلات و جنگلی حیات کا تحفظ ہے۔نیشنل  پارکس  کا سارا انتظام گلگت بلتستان کی منتخب  صوبائی حکومت کے محکمہ جنگلات کے زیر نگرانی ہے۔موسمیاتی تبدیلی کے اثرات گلگت بلتستان پر پڑ رہے ہیں۔ جس کی ایک بڑی وجہ جنگلات کا بے دریغ کٹاو ہے۔ جس کا تحفظ ہم سب کا اجتماعی فرض ہے۔لیکن اپوزیشن لیڈر اس اہم قومی مسئلے کو بھی سیاست کی نذر کر رہے ہیں تاکہ اپنی پارٹی کی پژمردہ سیاست میں جان ڈال سکے۔انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم عوام کو باور کرانا چاہتے ہیں نیشنل پارک کے قیام کا مقصد صرف و صرف جنگلات و جنگلی حیات کا تحفظ ہے۔ ان پارکس کا  سارا انتظام وہاں کی مقامی آبادی کی شراکت داری اور شمولیت کیساتھ محکمہ جنگلات گلگت بلتستان کر رہا ہے۔ نیشنل پارک کے قیام سے مقامی آبادی کو بالواسطہ  فائدہ ہوگا وہاں پہ روزگار کے مواقع پیدا ہونگے،اور  ان سے ہونے والی  آمدنی کا زیادہ تر حصہ مقامی آبادی کو ہی  جائیگا۔