44

چاہتے ہیں سینیٹ انتخابات شفاف ہوں،وفاقی وزراء

کراچی ( آئی این پی)وفاقی وزراء نے کہا ہے کہ چاہتے ہیں سینیٹ انتخابات شفاف ہوں،سیٹیں کم ہونے کاخطرہ نہیں،ہوسکتاہے ایک2سیٹ اضافی مل جائیں،سندھ حکومت جوکررہی ہے اس سے سیاسی انتقام کی بوآرہی ہے،پی  ٹی آئی حکومت کومعاشی خسارہ ورثے میں ملا،کوئی بھی حکومت خوشی سے آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاتی،معاشی بحالی کے لئے حکومت  نے مشکل فیصلے کیے،چیلنجزضرورہیں لیکن سمت درست ہے، ان خیالات کا اظہار وفاقی وزراء اسد عمر اور عبدالحفیظ شیخ  نے ایم کیو ایم پاکستان کے رہنمائوں سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کیا۔ اسد عمر نے کہا کہ ملاقات میں سینیٹ انتخابات سے متعلق بھی بات ہوئی،کراچی سے متعلق مختلف امورپربھی بات ہوئی،اچھے ماحول میں باتیں ہوئیں،عبدالحفیظ شیخ کی کارکردگی ٹھیک ہے اس لیے توسینیٹ کاٹکٹ جاری کیاگیا،چاہتے ہیں سینیٹ انتخابات شفاف ہوں،سیٹیں کم ہونے کاخطرہ نہیں،ہوسکتاہے ایک 2سیٹ اضافی مل جائیں،سندھ حکومت جوکررہی ہے اس سے سیاسی انتقام کی بوآرہی ہے، اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ الیکشن دوشخصیات کے درمیان نہیں بلکہ دوپارٹیوں کے درمیان ہے ایک جماعت حکومت اور دوسری جماعت اپوزیشن ہے،امیدہے سینیٹ الیکشن  شفاف ہوں گے،پی ٹی آئی حکومت کومعاشی خسارہ ورثے میں ملا،کوئی بھی حکومت خوشی سے آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاتی،معاشی بحالی کے لئے حکومت  نے مشکل فیصلے کیے،کروناوائرس سے پہلے ٹیکس کلیکشن میں17فیصداضافہ کیاگیا،کروناکے دوران ڈیڑھ کروڑخاندانوں کوکیش پیسے دیئے گئے،چیلنجزضرورہیں لیکن سمت درست ہے،وزیراعظم کاکوئی ذاتی کاروبارنہیں وہ ملک کی بہتری کیلئے کام کررہے ہیں، اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماء فیصل سبزواری نے کہا کہ سینیٹ انتخاب سے متعلق ووٹوں پربھی بات ہوئی،کراچی میں ماس ٹرانزٹ اورسیوریج سے متعلق بھی بات ہوئی، امیدہے پی ٹی آئی حکومت مردم شماری سے متعلق تحفظات دورکرے گی۔