15

ڈیجیٹل نظام کی مدد سے معیشت کو دستاویزی بنائیںگے،وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے ہمارے ملک میں ٹیکس کم اکٹھا ہوتا ہے ، ڈیجیٹل نظام کی مدد سے ہم مالی لین دین اور معیشت کو دستاویزی معیشت کی طرف لے جائیں گے، اسٹیٹ بینک کے اقدامات سے ترسیلات زر میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے، ریکارڈ ترسیلات زر سے ڈالر کے مقابلے میں روپیہ مستحکم ہوا ہے، راست پروگرام غربت کے خاتمے میں بھی مدد گار ثابت ہوگا۔ پیر کو ملک کے پہلے فوری ڈیجیٹل ادائیگی کے نظام راست  کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ بدقسمتی سے ہمارے ملک میں ٹیکس کم اکٹھا ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل نظام کی مدد سے ہم مالی لین دین اور معیشت کو دستاویزی معیشت کی طرف لے جائیں گے۔اس موقع پر وزیراعظم نے گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر کی بھی تعریف کی اور کہا کہ اسٹیٹ بینک کے اقدامات سے ترسیلات زر میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے، ریکارڈ ترسیلات زر سے ڈالر کے مقابلے میں روپیہ مستحکم ہوا ہے، راست پروگرام غربت کے خاتمے میں بھی مدد گار ثابت ہوگا۔وزیراعظم عمران خان نے کہا   کہ پاکستان میں کم ٹیکس اکٹھا ہونے کے باعث عوام پر جتنا پیسہ خرچ ہونا چاہیے اتنا نہیں ہو رہا جبکہ کیش اکانومی بھی ترقی کی راہ میں رکاوٹ ہے۔ وزیر اعظم کا مزید کہنا تھا کہ 22 کروڑ آبادی میں سے صرف 20 لاکھ افراد ٹیکس دیتے ہیں، جن میں سے تین ہزار افرار 70 فیصد ٹیکس دیتے ہیں۔وزیر اعظم نے سٹیٹ بینک کی جانب سے متعارف کروائے جائے والے ڈیجیٹل ادائیگی کے نظام کو سراہتے ہوئے ہوئے کہا کہ اس سے معاشی نظام میں مثبت تبدیلی آئے گی۔ وزیراعظم نے کہا کہ سٹیٹ بینک کے مثبت اقدامات سے سمندر پار پاکستانیوں کی جانب سے ترسیلات زر میں ریکارڈ اضافہ  ہوا ہے جو پاکستان کی تاریخ میں پہلے کبھی نہیں ہوا۔وزیر اعظم  کے مطابق بیرون ملک موجود پاکستانیوں نے قانونی ذرائع سے ملک پیسے بھجوائے جس کی وجہ سے برسوں سے جاری کرنٹ اکانٹ خسارہ سرپلس یں چلا گیا ہے اور یہ بہت اہم بات ہے۔اس سے روپے پر دبا کم ہوا،کرنٹ اکانٹ خسارہ بڑھنے سے روپے پر دبا بڑھتا ہے جس کا اثر غریبوں پر پڑتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ راست ڈیجیٹل پاکستان کی جانب ایک اہم قدم ہے اس سے ہم آہستہ آہستہ کیش اکانومی سے دور ہوتے جائیں گے اور اس کا فائدہ بھی عوام کو ہی ہو گا۔وزیر اعظم نے احساس پروگرام کا حوالہ دیتے ہوئے کہا اس کے ذریعے غربت کے خاتمے کے لیے کام کیا جا رہا ہے۔عمران خان   نے کہاکہ  ہمارے ہاں غیر روایتی معیشت چل رہی ہے جس کی وجہ سے درست ریکارڈ مرتب نہیں ہو رہا۔وزیر اعظم نے خواتین کو بااختیار بنانے اور کاروبار میں آگے لانے کے حوالے سے کہا کہ انہیں خوشی ہے کہ نئے نظام سے کام کرنے والی خواتین بھی فائدہ اٹھا سکیں گی۔