26

ہیلتھ انڈومنٹ فنڈ کی رقم50کروڑ سے بڑھاکرڈیڑھ ارب کردی گئی

گلگت بلتستان میں مستحق اور غریب مریضوں کے لئے علاج معالجے کے لئے ہیلتھ انڈو منٹ کی رقم 50 کروڑسے بڑھا کر ڈیڑھ ارب کردی گئی ۔ جی بی میں انڈو منٹ فنڈ سے موذی امراض کے شکار 37 مریضوں کے علاج معالجے پر ڈیڑھ کروڑ سے زائد رقم خرچ کی گئی ہے ۔ ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ کے فوکل پرسن سید اشتیاق حسین نے کے پی این کو بتایا کہ گلگت بلتستا ن میں ایسے غریب اور مستحق مر یض جو موزی امراض کا شکار ہوں اور علاج معالجے کی سکت نہ رکھتے ہوں ایسے مریضوں کے علاج معالجے کے لئے وزیر اعلی ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ قائم کیا گیا ہے ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ کے لئے پہلے 50 کروڑروپے مختص تھے جو کہ موجود صوبائی حکومت نے بڑھا کر ڈیڑھ ارب روپے کر دیئے ہیںوزیر اعلی گلگت بلتستان نے ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ کو مزیدوسعت دینے کے لئے تجاویز مانگی ہیں تاکہ علاقے میں مستحق مریضوں کو علاج معالجے کی تمام دستیاب سہولیات فراہم کی جا سکیں انہوں نے کہا کہ ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ سے موذی امراض کا شکار مریضوں کے علاج معالجے کے لئے رقم فراہم کی جاتی ہے مارچ سے اب تک 37 مریضوں کے علاج پر ڈیڑھ کروڑ سے زائد رقم خرچ ہوئی ہے جو کہ ہڈیوں کے کینسر (بون میرو)کڈنی ٹرانسپلانٹ 'امراض قلب (دل کے آپریشن) اور کینسر کے امراض میں مبتلا تھے کے علاج کے لئے الشفاء ہسپتال اسلام آباد ' اے ایف آئی سی سمیت دیگر ہسپتالوں میں علاج معالجے کے اخراجات ادا کئے گئے ہیں انہوں نے کہا کہ ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ سے غریب اور مستحق مریضوں کو مفت' معیاری اور بروقت علاج کی سہولیات فراہم کی جاتی ہیں خصوصا وہ مستحق افراد جن کا بی آئی ایس پی سکو ر 32.5 پی ایم ٹی یا اس سے کم ہو اور انہیں متعلقہ ضلع کا ڈی سی غربت سڑٹفکیٹ فراہم کرے اور صحت کارڈ کے وہ مستحقین جن کے کارڈ کی بالائی حد ختم ہو اور مزید علاج کی ضرورت ہو فنڈسے فائدہ اٹھاتے ہیں۔فوکل پرسن نے کہا کہ میڈیکل بورڈ کی تصدیق کے بعد متعلقہ مریض کو ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ کے پینل ہسپتال ریفر کیا جاتا ہے جہاں اسے مفت علاج کی سہولت فراہم کی جاتی ہے ۔ جہاں پر علاج کے لئے ہونے والے تمام اخراجات ہیلتھ انڈو منٹ فنڈ سے ادا کئے جاتے ہیں