Image

کارکردگی بڑھانے کےلئے اداروں کی حوصلہ افزائی ہونی چاہیے،حفیظ الرحمن

سابق وزیراعلی و صدر مسلم لیگ (ن) گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے چیف سیکرٹری گلگت بلتستان محی الدین وانی سے ملاقات کی۔ ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے تنخواہوں میں اضافے ،محکمہ صحت، 1122، کو رسک الاو¿نس اور ضلع نگر میں گرلز ڈگری کالج کے قیام کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔چیف سیکرٹری نے حفیظ الرحمن کو مسائل فوری حل کرنے کی یقین دہانی کرادی۔ملاقات کے دوران گفتگو میں سابق وزیراعلی حفیظ الرحمن نے کہا کہ ویسٹ مینجمنٹ کمپنی،محکمہ صحت اور محکمہ 1122 کی خدمات گلگت بلتستان کے نظام حکومت کا مثبت چہرہ ہیں۔ گلگت بلتستان کے عوام خدمات دینے والے اداروں کے خدمات کے معترف ہیں۔گلگت بلتستان آنے والے لاکھوں سیاحوں کی خدمات کی اضافی زمہ داری بھی بخوبی نباہ رہے ہیں۔ضلع نگر کے عوام اور تعلیم کے بنیادی حق کے اصول کے تحت نگر میں گرلز ڈگری کالج کا قیام اولین ضروت ہے۔محکمہ تعلیم میں اساتذہ کے ٹیسٹ انٹرویو کے بعد ویٹنگ لسٹ کا فوری اجراءکیا جائے۔ضروت اس امر کی ہے اداروں کی کارکردگی بڑھانے کیلئے حوصلہ افزائی کی جائے سرپرستی کی جائے اور محرومیوں اور مایوسیوں کا ازالہ کیا جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ ویسٹ مینجمنٹ کمپنی نے اپنے قیام کے مختصر عرصے میں اپنی نمایاں خدمات سے عوام میں اپنا مقام پیدا کیا ہے۔فوری طور پر اس ادارے کی تنخواہوں میں 20 فیصد اضافہ کیا جائے اور 50 کروڈ مالیت سے ابتدائی انڈومنٹ فنڈ کا قیام عمل میں لایا جائے۔تاکہ اس فنڈ کے منافع سے کمپنی کے مالی معاملات مستحکم ہو سکیں۔ماضی میں اس کمپنی کے قیام سے قبل گلگت بلتستان کے صفائی کے اخراجات کمپنی کے اخراجات سے زیادہ رہے ہیں۔ آبادی کے اضافے کے حساب سے اس کمپنی کے اخراجات میں بھی اضافہ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کے ڈاکٹروں اور پیرامیڈیکل اسٹاف نے عالمی وباءکرونا کے دوران اپنی قیمتی جانوں کے نذرانے دیئے ہیں۔اس ادارے کی خدمات کو ملکی اور بین الاقوامی طور پر سراہا گیا ہے۔اور گلگت بلتستان پہاڑی علاقے اور رقبہ پھیلا ہوا ہے محکمہ 1122 نے کم وسائل سے بڑی شاندار خدمات سر انجام دی ہیں۔ان اداروں کو فوری طور پر رسک الاو¿نس دینا عین انصاف ہے۔اس موقع پر چیف سیکرٹری گلگت بلتستان محی الدین وانی نے محکمانہ جاتی مسائل اور عوامی مسائل اجاگر کرنے کے جزبے کو سراہتے ہوئے تمام مسائل فوری حل کرنے کی یقین دہانی کروائی ہے۔