بجٹ حکومت نہیں بنارہی کہیں اور بن رہا ہے، اپوزیشن


 گلگت( سٹاف رپورٹر) متحدہ اپوزیشن گلگت بلتستان نے کہا ہے کہ بجٹ کی تقسیم میں اپوزیشن کو دیوار سے لگایا جارہا ہے ،ہمیں اعتماد میں نھیں لیا گیا تو عوامی تحریک شروع کریں گے۔ متحدہ اپوزیشن کے رہنماو ¿ں نواز خان ناجی' جاوید علی منوا' سید سہیل عباس شاہ' راجہ زکریا اور کرنل ریٹائرڈ عبید اللہ بیگ نے بجٹ کے حوالے سے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم فساد کی طرف نہیں جانا چاہتے ہیں۔ بجٹ کے حوالے سے ہمارے ساتھ کوئی رابطہ نہیں کیا گیا۔ بجٹ کے لئے عوامی نمائندوں سے رابطہ کیا جائے جس ایوان سے منظوری لینی ہے اس ایوان کے نمائندوں کو کم از کم کاغذ تو دیا جائے۔ اگر یہ رویہ رہا تو بجٹ نام کی کوئی چیز پاس نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ جون میں بجٹ بنایا جاتا یے۔ موجودہ حکومت کی ترجیحات رجیم چینج، زمین چینج اور سکیم چینج پراسس میں لگی ہوئی ہے۔ طلباءسے لیکر ایس پی ایس تک سب احتجاج پر ہیں۔ پری بجٹ میں تجاویز دیں مگر سروں پر جوں تک نہیں رینگی۔ خواہش تھی کہ خوش اسلوبی کے ساتھ بجٹ پاس ہو سکے۔ علاقہ جس مالی بحران اور کشمکش میں ہے تو اس سنگینی کا متحمل نہیں ہو سکتا ہے۔ 72 سکیمیں ریوائز ہوئی ہیں جو کہ اپنی جیب اور گرم کرنے کے لئے کی گئی جس کی اپوزیشن اور حلقوں کے عوام زمہ دار نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال خسارے کا بجٹ پیش کیا گیا 11 ارب اس کے ہیں۔ نان ڈویلپمنٹ میں 3 سے 4 ارب کا اضافہ ہے۔ یہ شادیانے بجا رہے ہیں۔ ترقی جمود کا شکار ہے۔ رات کے اندھیرے میں زمینیں فروخت کر رہے ہیں تاجر احتجاج پر ہیں۔ تحریری طور پر تجاویز دیتے ہیں جون کے آخری ہفتے میں پلاننگ منسٹر اور وزیر خزانہ اپنے دفتر تک موجود نہیں ہیں ان کو بجٹ کا پتہ تک نہیں ہے۔ 21 جون سے پہلے اپنا لائحہ عمل پیش کریں گے۔ گورخ دھندہ چل رہا ہے۔ تھرو فارورڈ کا راگ جیب گرم کرنے کرنے کے الاپا جا رہا ہے۔ اگر کسی کو بھی فائدہ پہنچانے کی کوشش کی گئی اس کو ہر حال میں ناکام بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پاک چین سرحد پر تاجر 6 ماہ سے احتجاج پر ہیں تاجروں کو علیحدہ بیگ لے جانے پر پابندی ہے یہ ظلم و ستم کی انتہا ہے۔ یونیورسٹی کے کیمپسز بند ہونے جارہے ہیں پتہ نہیں حکومت کی ترجیحات کیا ہیں تو۔ فیصلہ سازی کا عالم یہ ہے کہ زمینیں دینے کا پتہ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ جی بی کو نکمے اور نکھٹے حکمرانوں کے زریعے مذاق نہ بنایا جائے۔ جی بی کو گہرے کنویں میں لے جا رہے ہیں کاٹھ کباڈ جمع کر رہے ہیں، 16 کروڑ کی سکیم 87 کروڑپر لے جارہے ہیں ایسے میں تھرو فارورڈ کا کہہ رہے ہیں موجودہ حکومت کے سی بی ایل کو بھی نیٹکو کی طرح تباہ کاری کی طرف لے جانا چاہ رہی ہے انہوں نے کہا کہ یتیموں کو گود لینے کی طرح کوآرڈنیٹرز لینے کا نہ تھمنے والا سلسلہ جاری ہے۔ عمران خان کے دور میں سیاحت کا شعبہ ترقی کی راہ پر گامزن ہوا۔ حاجی گلبر کو ناکام بنانے کے لیے امجد، حفیظ اور گورنر کردار ادا کر رہے ہیں آئینی حقوق کے لئے ہم بھی سڑکوں پر نکلیں گے۔ احتجاج کو روکنا کسی کے بس کی بات نہیں ہے۔ گرین ٹورازم کے نام پر نصف جی بی کو نیلام کیا گیا ہے ہماری سکیموں کے ساتھ نہ چھیڑیں۔ جی بی کا بجٹ حکومت نے نہیں بنایا ہے کہیں اور سے بنا ملاہے تمام منصوبوں کو منصفانہ طور پر تقسیم کیا جائے۔ بجٹ پریکٹس کو یکسر مسترد کرتے ہیں تاجر کش پالیسی پر سوست میں تاجروں کا احتجاج ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہاگو جال میں بجلی کی بندش پر گلمت میں احتجاج ہے عوام کے منتخب نمائندوں کو چھوڑکر معاونین اور ترجمان کے ذریعے بجٹ تقسیم کیا گیا تو ہم منتخب نمائندے عوام کے ساتھ سڑکوں پر نکلیں گے۔ پریس کانفرنس کے دوران اپوزیشن لیڈ کاظم میثم نے ٹیلیفونک خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نااہل حکومت کو لا کر بٹھایا گیا جو کہ اخلاقی جواز نہیں رکھتے۔ ہم اپنی سیاسی اور عوامی جدوجہد کو جاری رکھیں گے۔ بجٹ کے حوالے سے غلط بیانی کی گئی۔ بجٹ ڈیفسٹ کو 'فل فل کرنے کی امید میں تھے۔ گندم سبسڈی میں 19 ارب کی ڈیمانڈ کی گئی گئی تھی 3 ارب کٹوا کر 16 ارب منظور ہونے پر حکومت ڈھول دھماکے کر رہی ہے۔ دوسری طرف11 ارب بجٹ خسارے کو چھپا رہے ہیں۔