Image

سیلابی چیلنجز کا مقابلہ کرنے سے قاصر، دنیا کو ساتھ دینا ہوگا، وزیراعظم

وزیراعظم محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ سیلابی صورتحال کے باعث پوری دنیا اور اداروں کو پاکستان کا ساتھ دینا ہوگا، کھڑے پانی سے وبائی امراض پھوٹنے کا خدشہ ہے، لاکھوں بچے خوراک سے محروم ہیں۔ موجودہ صورتحال میں پاکستان اپنے وسائل سے معاشی اور سیلابی چیلنجز کا مقابلہ کرنے سے قاصر ہے۔ سیلاب متاثرین کی بحالی کے حوالہ سے آن لائن جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ آج ہم نے ورلڈ بینک کے صدر، آئی ایم ایف کے منیجنگ ڈائریکٹر کے ساتھ ملاقات کی جس میں بڑی تفصیل کے ساتھ پاکستان میں سیلاب کی صورتحال سے انہیں آگاہ کیا گیا۔ انہوں نے اس پر اظہار افسوس کیا اور پاکستان کو اس مشکل وقت میں ہرممکنہ مدد کی یقین دہانی کرائی۔ وزیراعظم نے کہاکہ میں نے انہیں بتایا کہ کس طرح لاکھوں بچے خوراک سے محروم ہیں اور ان کے بیماری میں مبتلا ہونے کا خدشہ ہے، وہاں پر بڑی تعداد میں بچے بخار اور ڈائیریا میں مبتلا ہیں، وہاں کھڑے پانی سے وبائی امراض پھوٹنے کا خدشہ ہے، انہیں بتایا کہ ہم آئی ایم ایف پروگرام کی پوری طرح پاسداری کریں گے تاہم اس وقت معاشی صورتحال کے ساتھ سیلاب کی جو تباہ کاریاں ہیں، صرف پاکستان کے عوام اپنے وسائل سے ان چیلنجز کا مقابلہ کرنے سے قاصر ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اس وقت پوری دنیا، دوست ممالک اور ترقی یافتہ ممالک کو پاکستان کے ساتھ کھڑا ہونا ہوگا، عالمی تنظیمیں، ورلڈ بینک اور دیگر اداروں کو پاکستان کے ساتھ کھڑا ہونا ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے جتنی بھی ریلیف ممکن ہو سکے وہ لینے کی کوشش کرنی ہے۔ وزیراعظم نے کہاکہ آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک نے اس سے پوری طرح اتفاق کیا اور مشکل کی اس صورتحال میں پاکستان کا پوری طرح ساتھ دینے کی یقین دہانی کرائی اور ہرممکنہ امداد کی جائے گی۔وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے سعودی عرب کے ولی عہد اور نائب وزیر اعظم شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز السعود سے ٹیلیفونک گفتگو کی۔ وزیراعظم نے مملکت سعودی عرب کے 92ویں قومی دن کے موقع پر ولی عہد کو مبارکباد دی۔ انہوں نے حرمین شریفین کے متولی شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور سعودی عرب کے عوام کے لیے مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے سعودی عرب کے برادر عوام کی مسلسل ترقی اور خوشحالی کے لیے نیک خواہشات کا اظہار بھی کیا۔ وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے ملنڈا اینڈ بل گیٹس کے بانی بل گیٹس سے ملاقات کی ۔وزیراعظم آفس کے میڈ یا ونگ سے جاری بیان کے مطابق اقوام متحدہ ہیڈ کوارٹرز روانگی سے قبل بل گیٹس کی وزیر اعظم محمد شہباز شریف سے ملاقات ہوئی ہے۔یہ ملاقات اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 77ویں اجلاس کے موقع پرہوئی۔صدر یورپی یونین کمیشن ارسلا وان ڈیر لیین نے پاکستان میں سیلاب متاثرین کےلئے آئندہ ہفتوں میں مزید انسانی امداد کا وعدہ کیا ہے۔ارسلا وان ڈیر لیین نے نیویارک میں یونائیٹڈ نیشنل جنرل اسمبلی (یو این جی اے)کے 77ویں اجلاس کے موقع پر وزیراعظم شہباز شریف سے ملاقات کی اور ملک میں تباہ کن سیلاب سے ہونے والے جانی نقصان پر گہرے دکھ کا اظہار کیا۔ملاقات کے دوران وزیراعظم نے سیلاب سے بڑے پیمانے پر ہونے والے نقصانات پر روشنی ڈالی۔تباہ کن سیلاب کے نتیجے میں 14 جون سے اب تک ایک ہزار 576 افراد جاں بحق اور 3 کروڑ 30 لاکھ افراد بے گھر ہوچکے ہیں، فصلیں، مویشی، پل اور سڑکیں زیر آب آچکے ہیں اور ملک کو تقریبا 30 ارب ڈالر کا نقصان پہنچا ہے۔ملاقات کے بعد وان ڈیر لیین نے ایک ٹوئٹ میں بتایا کہ انہوں نے تباہ کن سیلاب کے متاثرین کے لیے وزیر اعظم شہباز شریف سے دلی افسوس کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے اپنی ٹوئٹ میں لکھا کہ ہم پاکستان کے عوام کی مدد کے لیے آئندہ ہفتوں میں مزید انسانی امداد کے ساتھ تعاون کو آگے بڑھائیں گے۔