22

بجلی بحران پرقابوپانے کیلئے حکومت سنجیدہ کوششیں کررہی ہے،ڈپٹی سپیکر

ڈپٹی سپیکر جی بی اسمبلی نذیر احمد ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں فارغ بیٹھنے کے لئے نہیں بلکہ علاقے کو درپیش مسائل کے حل کے لئے آئے ہیں صدر پاکستان سے لے کر وفاقی وزرا تک ملاقاتوں کے دوران خطے کا مقدمہ پیش کیا بہت جلد گلگت بلتستان میں تعمیر وترقی کے نئے دور کا آغاز ہوگا۔غذرپریس کلب کے وفد سے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ گلگت بلتستان کے سالانہ ترقیاتی فنڈز میں اضافے کے علاوہ پی ایس ڈی پی کے ذریعے اہم میگا سکیموں پر کام شروع ہوگا علاقے میں بجلی کا بحران ختم کرنے کے لئے جی بی حکومت سنجیدہ کوششیں کررہی ہے ہم نے سی پیک منصوبے میں علاقے کے اندر پاؤر سیکٹر میں بڑے پراجیکٹس پر کام شروع کرانے کا مطالبہ کیا ہے ماضی میں بجلی بحران کے خاتمے کے لئے زبانی جمع خرچ کے سوا کچھ نہیں کیا گیا جس کی سزا آج لوگ بھگت رہے ہیں انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان اسمبلی میں حکومت عبوری صوبے کے قیام کے لئے قرارداد پیش کرے گی یقین ہے کہ تمام اپوزیشن جماعتیں اس قرارداد کی حمایت کریں گی ماضی میں اپوزیشن جماعتوں نے عبوری صوبے پر ہی سیاست کی ہے آج اگر حکومت عبوری صوبہ بناتی ہے تو پھر کسی کو اعتراض نہیں ہونا چاہئیے ہم چاہتے ہیں گلگت بلتستان کے محرومیوں کا آزالہ ہو عبوری صوبہ خطے کی آئینی حیثیت کے تعین کے لئے پہلا زینہ ہوگا انہوں نے مذید کہا کہ ضلع غذر کو چترال کو ملانے کے لئے غذر ایکسپریس وے کی تعمیر کے حوالے سے صدر پاکستان اور دیگر ذمہ دار وزرا و حکام سے ملاقات کی ہے ہمیں اس اہم شاہراہ کی تعمیر کی یقین دہائی کرائی گئی ہے وفاقی وزیر امور کشمیر بھی اس شاہراہ کی تعمیر کے لئے سنجیدہ ہیں بہت جلد اس پراجیکٹ کی تعمیر کے لئے بھی اہم اقدامات اٹھائے جائیں گے غذر سے بارست تک روڑ کی منٹننس کے لئے 90 ملین روپے رکھے گئے ہیں اس منصوبے کی تعمیر کے لئے بہت جلد ٹینڈر ہوگا اور غذر روڑ کی حالت بہتر ہوجائے گی انہوں نے مزید کہا کہ پھنڈر 82 میگاواٹ پاؤر پراجیکٹ،22 میگاواٹ گلوداس پراجیکٹ کے علاوہ گاہکوچ میں ٹاؤن پلاننگ پہلی ترجیح ہے عوام کی امنگوں پر پورا اتریں گے لوگ مختصر عرصے کے دوران تبدیلی رونماء ہوتے دیکھیں گے۔