72

ترقیاتی منصوبوں میں سو فیصد ملازمتیں گلگت بلتستان کیلئے مختص کرنے کا مطالبہ


گلگت(خصوصی رپورٹ)گلگت  بلتستان اسمبلی نے ایک قرارداد کی متفقہ طورپر منظوری دی ہے جس میں فیڈرل پی ایس ڈی پی کے تحت گلگت  بلتستان کے ترقیاتی منصوبوں میں سو فیصد ملازمتیں گلگت  بلتستان کے لئے مختص کرنے کا مطالبہ کیاگیا ہے قرارداد میں کہاگیا ہے کہ وفاقی حکومت کی طرف سے گلگت  بلتستان میں ہائیڈرو پاور پرجیکٹس موسومہ دیامربھاشا ڈیم (دیامر )بونجی ہائیڈرو پاور پروجیکٹ (استور )ہر پو پاور پروجیکٹ (سکردو) سدپارہ ڈیم پروجیکٹ (سکردو )عطاء آباد ہائیڈرو پاور پروجیکٹ (ہنزہ )باشو ہائیڈرو پاور پروجیکٹ (سکردو )پھنڈر ہائیڈرو پاور پروجیکٹ (غذر )ڈویاں ہائیڈرو پاور پروجیکٹ (استور )تانگیر ہائیڈرو پاور پروجیکٹ (دیامر )شیوک ڈیم ملٹی پرپز پروجیکٹ (گانچھے )عمل درآمدکے مراحل میں مذکورہ بالا پروجیکٹس پر واپڈا پاکستان تقرریاں عمل میں لارہا ہے اورمذکورہ پروجیکٹس میں گلگت  بلتستان کیلئے ملازمتوں میں صرف ایک فیصد کوٹہ مقرر کیا جارہا ہے جو کہ گلگت  بلتستان کے عوام کے لئے ناقابل قبول اور ناقابل عمل ہے لہٰذا گلگت  بلتستان کا یہ مقتدر ایوان مطالبہ کرتا ہے کہ مذکورہ بالا پروجیکٹس میں سو فیصد ملازمتیں گلگت  بلتستان کے لئے مختص کیا جائے تاکہ گلگت  بلتستان میں موجود پسماندگی بے روزگاری اور غربت کا خاتمہ ممکن ہوسکے پیر کے روز امجد حسین ایڈووکیٹ اور غلام شہزاد آغا کی یہ مشترکہ قرارداد قائد حزب اختلاف امجد حسین ایڈووکیٹ نے ایوان میں پیش کیا ایوان میں موجود کسی بھی رکن نے قرارداد کی مخالفت نہیں کی جس پر ڈپٹی سپیکر نذیر احمد نے قرارداد کی متفقہ منظوری کا اعلان کیا۔