180

پاکستان کا یاسین ملک کی رہائی کیلئے اقوام متحدہ کو خط

پاکستان نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریش پر زور دیا ہے کہ وہ نئی دہلی کی تہاڑ جیل میں قید شدید بیمار جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کی رہائی کے لیے بھارت پر دبائو ڈالیں اور اپنا اثرورسوخ استعمال کریں۔اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے نام جاری خط میں حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک کی اپنے شوہر کی رہائی کی اپیل بھی منسلک کرتے ہوئے کہا کہ مناسب عمل اور حفاظتی اقدامات کے بغیر بھارت کے ظالمانہ قبضے، طاقتوں، قوانین اور طریقہ کار میں زندگی گزارنے اور بھارتی قبضے کے خلاف مزاحمت کرنے والے کشمیریوں اور سیاسی رہنمائوں پر بھارتی مظالم ان کے بنیادی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہیں۔خط میں مشعال ملک نے کہا کہ بھارتی قید میں حریت رہنما یاسین ملک کی صحت بہت خراب ہے اور مسلسل جسمانی اور ذہنی تشددسے ان کی حالت بہت خراب ہو گئی ہے۔پاکستانی مندوب منیر اکرم نے سیکرٹری جنرل کو اپنے گزشتہ خط سے متعلق یاد دہانی کرائی جس میں انہوں نے بھارت میں کشمیری سیاسی کارکن آسیہ اندرابی کی 2016 سے مسلسل قید کی طرف توجہ دلائی۔انہوں نے خط کے ساتھ پاکستانی پارلیمنٹ کے ایوان بالا کی منظور کردہ قرارداد بھی منسلک کی ہے جس میں کہا گیا کہ پاکستانی حکومت اقوام متحدہ کی مدد سے بھارت کے زیر تسلط مقبوضہ جموں کشمیر میں حریت رہنما یاسین ملک اور دیگر سیاسی رہنمائوں کی غیر قانونی بھارتی قید سے رہائی کے لیے کوششیں کرے۔ دوسری جانب یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک نے کہا ہے کہ یاسین ملک جیسے لیڈر صدیوں بعد پیدا ہوتے ہیں اگر انھیں کچھ ہوا تو پورے ایشیا کے لیے مسئلہ بنے گا۔جمعرات کویاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک نے پاکستان بار کونسل کے رہنمائوں کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان بار کونسل کے عہدیداروں کا شکریہ اداکرتی ہوں۔یاسین ملک کی اہلیہ نے کہا کہ ہماری تحریک کو ناکام کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جبکہ پوری قوم کے خلاف جینوسائیڈ کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔مشعال ملک نے یہ بھی کہا کہ یاسین ملک کے خلاف ہندوستان نے پرانا کیس کھول دیا ہے، انھیں تہاڑ جیل میں رکھا گیا ہے جبکہ  یہ وہی تہاڑ جیل ہے جہاں پہلے بھی کشمیریوں کو رکھا گیا تھا اور ہمیں خدشہ ہے کہ یاسین ملک کو کہیں سزا نہ دی جائے۔